Post With Image

وی وی آئی پی موومنٹ کیس، تمام رکاوٹیں دور کی جائیں: سپریم کورٹ کا حکم


سپریم کورٹ کراچی رجسٹری نے وی وی آئی پی موومنٹ ازخود نوٹس کیس نمٹا دیا۔ چیف جسٹس نے پولیس رولز کے مطابق تمام رکاوٹوں کو دور کرنے کا حکم دے دیا۔ سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں وی وی آئی پی موومنٹ کی سماعت ہوئی۔ آئی جی سندھ، ڈی آئی جی ٹریفک اور دیگر افسران عدالت پیش ہوئے۔ چیف جسٹس نے آئی جی سندھ سے کہا خواجہ صاحب بتائیں کہ شہریوں کے حقوق کیا ہیں؟، سڑکوں کو بند کرنے سے متعلق شہریوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے، آئی جی سندھ نے کہا وی وی آئی پیز کے لیے قوانین موجود ہیں۔ چیف جسٹس نے کہا آئی جی صاحب، میں بھی تو وہ وی آئی پی ہوں، میرے لیے تو سٹرک بلاک نہیں ہوتی۔ آئی جی نے کہا کہیں سڑکیں بند نہیں، صرف موومنٹ کے لیے انتظامات کیے جاتے ہیں، صرف دو منٹ کے لیے ٹریفک بند کرتے ہیں۔ چیف جسٹس نے کہا وی وی آئی پی موومنٹ سیاسی رہنماؤں کی ہو یا کسی اور کی،شہریوں کو تکلیف سے بچایا جائے۔ عدالت نے آئی جی کو حلف نامہ جمع کر نے کا حکم بھی دیا۔ چیف جسٹس نے حکم دیا کہ پولیس رولز کے مطابق تمام رکاوٹوں کو دور کیا جائے۔ آئی جی سندھ نے عدالتی احکامات پر عملدرآمد کی یقین دہانی کرا دی۔ کیس کی سماعت کے بعد اے ڈی خواجہ نے میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ میرے عہدے کے بارے میں حکومت سے پوچھا جائے، میں اپنا عہدہ چھوڑنے کیلئے تیار ہوں لیکن عدالتی فیصلے پر عہدہ چھوڑوں گا۔ ادھر سپریم کورٹ آمد سے پہلے چیف جسٹس ثاقب نثار بغیر کسی پروٹوکول و سکیورٹی کے مزار قائد پہنچے، چیف جسٹس نے مزارقائد جانے کیلئے روٹ بھی نہیں لگوایا۔


آپ کی رائے

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا