اینڈرائیڈ آپریٹنگ سسٹم میں نقص سامنے آ گیا، فون ہیک کرنا ممکن

گوگل کی سکیورٹی ٹیم نے اینڈرائیڈ آپریٹنگ سسٹم میں موجود بڑے نقص کی نشاندہی کر دی جسکی وجہ سے سمارٹ فون کی ہیکنگ ممکن ہے۔ غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق گوگل کی ٹیم نے مسلسل مانیٹرنگ کے بعد اینڈرائیڈ آپریٹنگ سسٹم میں موجود خامی کو تلاش کیا۔ سام سنگ ایس 7 کے بعد کے آنے والے تمام سیٹ، ہواوے اور گوگل کے اپنے فونز میں بھی سنگین کمزوری موجود ہے جس کے باعث ہیکرز کسی بھی فون تک آسانی سے رسائی حاصل کرسکتے ہیں۔ گوگل کے ترجمان کا کہنا تھا کہ کوئی بھی ہیکر ایک ایپلیکیشن یا براؤزر کو استعمال کر کے کسی بھی صارف کے فون کا مکمل کنٹرول حاصل کرسکتا ہے۔ محققین کا کہنا ہے کہ سکیورٹی کی خامی ممکنہ طور پر اسرائیلی ساختہ اسپائی ویئر کمپنی نے فروخت کی اور اسی وجہ سے صارفین کے واٹس ایپ پر بھی سائبر حملے ہوئے۔ ماہرین کے مطابق اس بگ کی نشاندہی 27 ستمبر کو ہوگئی تھی البتہ اینڈرائیڈ ٹیم کو دی گئی مہلت ختم ہونے اور خامی پر قابو نہ پانے کے بعد اس کا انکشاف عام صارفین کے سامنے اب کیا گیا تاکہ وہ کمپنی سے اپنے فون کو محفوظ بنانے کا مطالبہ کرسکیں۔ گوگل ماہرین کی جانب سے اسمارٹ فونز کے ماڈل کی فہرست بھی جاری کی گئی جس کے مطابق گوگل پکسل 1، پکسل ایکس ایل 1، پکسل 2 ایکس ایل، ہواؤے پی 20، ریڈمی فائیو اے، ریڈمی نوٹ، سام سنگ گلیکسی ایس 7، ایس 8 اور ایس 9 کی ڈیوائسز متاثر ہوسکتی ہیں۔