مصباح الحق کے خلاف عدالت میں رٹ دائر

قومی کرکٹ ٹیم کے چیف سلیکٹر مصباح الحق کے خلاف عدالت میں رٹ پٹیشن دائر کردی گئی ہے۔ گوجرانوالہ میں رٹ پٹیشن منظور قادربھنڈرایڈووکیٹ نے سول جج ابرار علی خان کی عدالت میں دائر کی۔ پٹیشن میں چئیرمین کرکٹ بورڈ، چیف ایگزیکٹو اور چیف سلیکٹر کو فریق بنایا گیا ہے۔ درخواست گزار کی جانب سے مصباح الحق کی 32 لاکھ روپے ماہانہ تنخواہ پر اعتراض لگایا گیا ہے۔ درخواست گزار نے کہا ہے کہ اس خطیر رقم سے غریبوں کیلئے یتیم خانہ یا اسکول کھولا جاسکتا ہے،عوام کے پیسے کا بے دریغ استعمال نہیں ہونا چاہیے۔ .مصباح الحق کے 2 عہدوں پرسوالات اٹھ گئے. درخواست کے متن میں درج ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کے شاہانہ اخراجات سے ہر پاکستانی متاثر ہورہا ہے،کرکٹ بورڈ کے کسی عہدیدار کی تنخواہ 5 لاکھ روپے سے زیادہ نہیں ہونی چاہیے۔ درخواست کے متن میں یہ بھی درج ہے کہ مصباح الحق کو پاکستان نے بہت کچھ دیا،انہیں اپنی خدمات مفت دینی چاہیے۔ گوجرانوالہ کی عدالت نے درخواست سماعت کیلئے منظور کرتے ہوئے بورڈ عہدیداران کو 15 اکتوبر کو طلب کر لیا ہے۔