ماضی میں ملک معاشی طور پر مستحکم نہیں ہوا‘وزیراعظم

اسلام آباد:(لیڈر نیوز) وزیراعظم نے کہا ہے کہ قومی سلامتی پالیسی میں قومی سلامتی کو حقیقی معنوں میں واضح کیا گیا ہے۔ ماضی میں ملک معاشی طور پر مستحکم نہیں ہوا۔مجبوری کی حالت میں آئی ایم ایف کے پاس جاناپڑتاہے۔وزیراعظم عمران خان نے قومی سلامتی پالیسی کی اشاعت کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پالیسی بنانے پر قومی سلامتی ڈویژن کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔ افواج کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں، ہمارے پاس تربیت یافتہ فوج ہے، ہم ریاست اور عوام کو ایک ہی راستے پر رکھنے کی کوشش کر رہے ہیں، ملکی معیشت کمزور ہوگی تو دفاع بھی کمزور ہوگا، مجبوری کی صورت میں ہمارے پاس آئی ایم ایف کے پاس جانا ہے۔ آئی ایم ایف کی شرائط پر عمل کرنا ہوگا۔وزیراعظم نے کہا کہ آئی ایم ایف کی شرائط ماننے کا بوجھ عوام کو اٹھانا پڑتا ہے، آئی ایم ایف سستے ترین قرضے دیتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ "ہر فلاحی ریاست اپنے کمزور طبقات کی ذمہ داری لیتی ہے۔ ہماری ترجیح سب سے پہلے کمزور طبقات کو تحفظ فراہم کرنا ہے۔ ہم نے ہیلتھ کارڈ کے ذریعے ہر خاندان کو تحفظ فراہم کیا ہے۔ جن صوبوں میں ہماری حکومت ہے وہاں ہیلتھ انشورنس فراہم کریں"۔ سندھ کے علاوہ تمام صوبوں میں ہیلتھ کارڈ جاری کیے جا رہے ہیں۔ ماضی میں بینک عام آدمی کو گھر بنانے کے لیے قرضے نہیں دیتے تھے۔