وزیراعلی پنجاب کا انتخاب، منحرفین کونکال کر دوبارہ گنتی کا حکم

لاہور: لاہور ہائیکورٹ نے وزیراعلی پنجاب کے الیکشن کے خلاف تحریک انصاف کی درخواستیں منظور کر کے منحرف ارکان کے 25 ووٹ نکال کر دوبارہ گنتی کا حکم دے دیا۔بتایا گیا ہے کہ لاہور ہائیکورٹ نے وزیراعلی پنجاب کے الیکشن کے خلاف درخواستیں منظور کر لیں، لارجر بنچ نے گذشتہ روز محفوظ کیا گیا فیصلہ چار، ایک کے تناسب سے سنایا۔ جسٹس شاہد محمود سیٹھی نے فیصلے سے مشروط اختلاف کیا۔ جسٹس صداقت علی خان کی سربراہی میں لارجر بنچ  میں جسٹس شہرام سرور چوہدری، جسٹس ساجد محمود سیٹھی، جسٹس طارق سلیم شیخ اورجسٹس شاہد جمیل خان شامل تھے۔عدالتی فیصلے میں وزیراعلی پنجاب کا الیکشن دوبارہ کروانے کا حکم دیا گیا ہے جس کیلئے پنجاب اسمبلی کا اجلاس کل شام 4 بجے بلانے کی ہدایت بھی جاری کی گئی ہے۔ مذکورہ فیصلے کی بعد حمزہ شہباز وزیراعلی پنجاب نہیں رہے اور صوبائی کابینہ بھی تحلیل ہو گئی ہے۔ تحریری فیصلے میں مزید کہا گیا ہے کہ پریزائڈنگ آفیسر 25 ووٹ نکال کر دوبارہ گنتی کرے، اگر چیف منسٹر کے لیے مطلوبہ نمبر حاصل نہ ہو سکیں تو ری پول کروایا جائے۔لارجر بنچ نے پی ٹی آئی کے علاوہ مسلم لیگ ق اور سپیکر پنجاب اسمبلی پرویز الٰہی کی اپیلوں پر سماعت کی۔ مذکورہ اپیلیں حمزہ شہباز کی بطور وزیراعلیٰ انتخاب کے خلاف دائر کی گئی تھیں۔