Post With Image

نوازشریف اور مریم نوازنے حاضری سے استثنیٰ کیلئے احتساب عدالت میں درخواست دائر کردی


اسلام آباد:سابق وزیراعظم نوازشریف اور مریم نوازنے حاضری سے استثنیٰ کیلئے احتساب عدالت میں درخواست دائر کردی۔استثنیٰ بیگم کلثوم نوازکی علالت کی وجہ سے مانگاہے۔درخواست میں موقف اختیار کیا گیاہے کہ نوازشریف اورمریم نوازنے لندن جاناہے،عدالت سے استدعا ہے کہ 19 فروری سے 2 ہفتے کیلئے حاضری سے استثنیٰ دیا جائے، نوازشریف اورمریم نوازکی استثنیٰ کی درخواست پرسماعت 15فروری کوہوگی۔واضح رہےمسلم لیگ ن کے صدر میاں نواز شریف کا کہنا ہے کہ اگر نیب کے ریفرنسز میں کچھ ہوتا تو ضمنی ریفرنس بنا کر نہ بھیجے جاتے، ریفرنس بنانے والے چاہتے ہیںکہ نواز شریف کو کسی نہ کسی طرح سزا ہو یہ احتساب کے نام پر انتقام ہورہا ہے۔اس مجرم کو کیوں نہیں پکڑا جا رہا جس نے دوبار آئین کو توڑا، ووٹ کے تقدس کی مثالیں سب دیکھ رہے ہیں اور لودھراں میں اس کا عملی مظاہرہ دیکھنے کو ملا ہے، کسی نئے میثاق جمہوریت کی ضرورت نہیں ہے۔احتساب عدالت میں پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے میاں نواز شریف نے کہا کہ ضمنی ریفرنسز مزید کتنے سال آتے رہیں گے اور کیونکر آتے رہیں گے؟ اس سے یہ یقین ہونے لگتا ہے کہ ان ریفرنسز میں کچھ نہیں ہے کیونکہ اگر ان میں کچھ ہوتا تو ضمنی ریفرنس کی ضرورت نہیں پڑتی۔ جنہوں نے ریفرنس بنا کر بھیجے ہیں وہ چاہتے ہیں کہ نواز شریف کو کسی نہ کسی طرح سزا ہو یہ احتساب کے نام پر انتقام ہورہا ہے۔میاں نواز شریف نے کہا انہیں خود معلوم نہیں کہ انتقام کیوں لیا جا رہا ہے جو ان سے انتقام لے رہے ہیں وہ ان لوگوں کو بھی پکڑیں جنہوں نے دو دفعہ مارشل لا لگایا اور ججز کو گرفتار کیا۔ یہ سب برداشت ہے، نہ اس پر کوئی توہین ہے اور نہ ہی اس پر انگلی اٹھائی جا رہی ہے لیکن ہم جیسے لوگ جنہوں نے ایٹمی دھماکے کیے، پاکستان کی معیشت کو عروج پر پہنچایا، موٹروے بنائے اور ملک سے لوڈ شیڈنگ اور دہشتگردی ختم کی ، سب سے بڑے مجرم ہم بنے ہوئے ہیں، وہ مجرم جو دو بار آئین توڑ گئے ان پر ہاتھ کیوں نہیں پڑتا وہاں تک جاتے ہوئے پر جلتے ہیں؟۔انہوں نے کہا کہ ووٹ کے تقدس کی مثالیں سب دیکھ رہے ہیں اور عوامی رد عمل سب پر عیاں ہے ، لودھراں میں اس کا عملی مظاہرہ دیکھنے کو ملا ہے، جو بھی سازشیں کر رہے ہیں پاکستان کے عوام اس کا جواب دے رہے ہیں کل جو ہوا وہ ان ہی جھوٹے کیسز اور احتساب کے نام پر انتقام کا جواب ہے ۔ میرا مقدمہ پاکستان کے عوام لڑ رہے ہیں جس پر انہیں سلام پیش کرتا ہوں۔(ن)


آپ کی رائے

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا